ایشیاء کپ میں ناقص کارکردگی کا پی سی بی ذمہ دار ہے ،محسن خان

انکوائری کمیٹی بناکر آنکھوں میں دھول جھونکی گئی، سابق کھلاڑی کو بیٹنگ کوچ بنایا جائے

کراچی (سپورٹس رپورٹر) سابق اوپننگ بیٹسمین محسن حسن خان نے کہا ہے کہ ایشیا کپ میں قومی ٹیم کی ناقص کارکردگی کی ذمہ دار کھلاڑیوں سے زیادہ ٹیم مینجمنٹ اور پی سی بی ہے ۔ ایک انٹرویو میں ان کا کہنا تھا کہ جیسے کسی بھی سکول کا معیار اس کی انتظامیہ کی وجہ سے بہتر ہوتا ہے ، ایسا ہی معاملہ کرکٹ کا بھی ہے ۔ پی سی بی میں چند عہدیدار قابل اور اہل ہیں لیکن انہیں کام کرنے نہیں دیا جا رہا اور بورڈ میں فرد واحد کی حکمرانی ہے ۔ ایک سوال پر انہوں نے بتایا کہ قومی ٹیم کو غیر ملکی کوچ کی ضرورت نہیں ، ملک میں ہی سابق ٹیسٹ کھلاڑی موجود ہیں جو کوچنگ کی ذمہ داری احسن انداز میں انجام دے سکتے ہیں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ گرانٹ فلاور اگر کوالیفائیڈ کوچ ہیں تو ان کا فائدہ نظر کیوں نہیں آتا۔ انہوں نے کہا کہ پی سی بی حکام پر ماہرکوچ مقرر کرنے کا خبط سوارہے تاہم یہ غیر ضروری بات ہے ۔ انہوں نے بتایا کہ ایشیا ء کپ کیلئے انکوائری کمیٹی قائم کرنے کا کوئی فائدہ نہیں اور پی سی بی کی جانب سے عوام کی آنکھوں میں دھول جھونکی جا رہی ہے ۔ قیمتی وقت ضائع کرنے سے اچھا ہے کہ اس وقت ورلڈ ٹی ٹونٹی سے قبل قومی کھلاڑیوں کو اعتماد فراہم کیا جائے اور بورڈ گرین شرٹس کیلئے مثبت فیصلے کرے جس کا میگا ایونٹ میں فائدہ ہوسکے ۔ محسن خان کا مزید کہنا تھا کہ عوام کیلئے کرکٹ صرف ایک کھیل نہیں بلکہ جنون ہے ۔ اس لئے قومی امنگوں کے مطابق فیصلے کئے جائیں۔

اپنا تبصرہ بھیجیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.